While surfing on the net, i came through this lovely poem . so touching and beautifully woven.

سنو جاناں

محبت رُت میں لازم ھے

بہت عُجلت میں یا تاخیر سے وہ مرحلہ آئے

کوئی بے درد ھو جائے

محبت کی تمازت سے بہت بھرپُور سا لہجہ

اچانک سرد ھو جائے

گُلابی رُت کی چنچل اوڑھنی بھی زرد ھو جائے

تو ایسے موڑ پر ڈرنا نہیں، رُکنا نہیں، گھبرا نہیں جانا

غضب ڈھاتی ھوئی سفّاک موجوں سے

کسی بھی سُرخ طوفاں سے

بہت نازک سی، بے پتوار دل کی ناؤ کو اُس پل

ھمیں دوچار کرنا ھے

ھمارا عہد ھے خود سے

کسی قیمت پہ بھی ھم کو

سمندر پار کرنا ھے

Advertisements